بورڈ نے پڑھے لکھے کرکٹرز تیار کرنے کی بنیاد رکھ دی

لاہور: پی سی بی نے مستقبل میں پڑھے لکھے کرکٹرز تیار کرنے کی بنیاد رکھ دی، ملکی تاریخ کی پہلی نیشنل اسکول چیمپئن شپ کو کاردار کپ کا نام دیا گیا ہے.
تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے مستقبل میں اعلیٰ تعلیم یافتہ کرکٹرز کی بڑی کھیپ تیار کرنے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر منصوبے کا آغاز کر دیا اور پاکستان کرکٹ ٹیم کے پہلے کپتان عبدالحفیظ کاردار کے نام سے منسوب ’’کاردار کپ‘‘ شروع کرنے کا پروگرام بنایا ہے، واضح رہے کہ چیئرمین پی سی بی قومی ٹیم کی پے در پے شکستوں کی بڑی وجہ ٹیم میں تعلیم یافتہ کھلاڑیوں کی کمی کو سمجھتے ہیں، ان کے مطابق اس وقت ٹیم میں اعلیٰ تعلیم یافتہ کھلاڑی مصباح الحق ہی ہیں، شہریار خان کی رائے میں مستقبل میں پڑھے لکھے کھلاڑیوں کو ٹیموں کا حصہ بنا کر انٹرنیشنل سطح پر ان سے اچھے نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں، پی سی بی کے زیراہتمام ڈیزائن کی گئی اسکول کرکٹ چیمپئن شپ میں ملک بھر کے16ریجنز اور ان کے97 اضلاع کے پلیئرز شریک ہوں گے، ایونٹ کی خاص بات یہ بھی ہے کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار سرکاری اسکولوں کے ساتھ پرائیویٹ اسکولوں سے تعلق رکھنے والے کھلاڑیوں کو بھی صلاحیتوں کے اظہار کا بھرپور موقع فراہم کیا جائے گا۔
کاردار کپ کا آغاز آئندہ کرکٹ سیزن سے ہوگا، پی سی بی کی جانب سے سابق چیئرمین جنرل (ر) توقیر ضیا کے صاحبزادے جنید ضیا ایونٹ کی نگرانی کرنے کے علاوہ بورڈ کے اسکول کرکٹ کے کنسلٹنٹ بھی ہوں گے، پی سی بی کی طرف سے جاری مراسلے میں چیمپئن شپ کی تاریخوں اور ٹیموں کی تعداد کا ذکر تو نہیں کیا گیا تاہم چیئرمین پی سی بی کا کہنا ہے کہ اگست ستمبر میں پورے ملک میں اسکول چیمپئن شپ کا انعقاد کروارہے ہیں جس میں1000سے زائد اسکول حصہ لیں گے، پہلے ان کے مقابلے ڈسٹرکٹ سطح پر اور پھر ریجنل اور نیشنل سطح پر ہوں گے، بوڈ ترجمان کے مطابق جونیئر سلیکشن کمیٹی چیمپئن شپ کے دوران شریک تمام کھلاڑیوں کی کارکردگی کا باریک بینی سے جائزہ لے گی اور غیر معمولی پرفارمنس دکھانے والے پلیئرز کا انتخاب کر کے انھیں نیشنل کرکٹ اکیڈمی بھیجے گی جہاں این سی اے کے بہترین کوچز کی نگرانی میں ان کھلاڑیوں کی صلاحیتوں کو مزید نکھارا جائے گا، مزید معلوم ہوا ہے کہ کاردار کپ کے فائنل مقابلے کراچی یا لاہور میں سے کسی ایک مقام پر ہوںگے۔
حتمی فیصلہ ان شہروں کے موسم کو دیکھتے ہوئے کیا جائے گا، ٹورنامنٹ کا شیڈول مرتب کرتے ہوئے اس بات کو بھی مدنظر رکھا جائے گا کہ کھلاڑیوں کے امتحان اور دوسری تعلیمی سرگرمیاں متاثر نہ ہوں، ترجمان بورڈ کے مطابق نیشنل کلب چیمپئن شپ اور انٹریونیورسٹی مقابلوں کا اعلان بھی بہت جلد ہوگا، ادھر نیشنل اسکول چیمپئن شپ کے حوالے سے شہریار خان کا کہنا ہے کہ اسکول پروگرام شروع کرنے کا مقصد قومی سطح پر پڑھے لکھے کھلاڑیوں کی بڑی تعداد تیار کرنا ہے، ان کا کہنا تھا کہ اگست ستمبر میں پورے ملک میں اسکول چیمپئن شپ کا انعقاد کروارہے ہیں جس میں1000سے زائد اسکول حصہ لیں گے، پہلے یہ مقابلے ڈسٹرکٹ سطح پر ہونگے جو ریجنل سے ہوتے ہوئے نیشنل سطح پر منعقد کرائے جائیں گے، چیمپئن شپ میں اچھی پرفارمنس کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کو نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ٹریننگ دی جائے گی، ہم کوئٹہ میں بھی کرکٹ اکیڈمی بنائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.