پاکستانیوں کے شناختی کارڈ کی دوبارہ تصدیق کا حکم

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کو 48 گھنٹوں میں 18 کروڑ پاکستانیوں کے قومی شناختی کارڈ کی دوبارہ تصدیق کا روڈ میپ بنانے کا حکم دیا ہے۔

خیال رہے افغان طالبان کے سربراہ ملا منصور کی ایک ڈرون حملے میں پاکستانی علاقے نوشکی میں ہلاکت اور ان کے پاس سے ملنے والے پاکستانی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کے بعد اٹھنے والے سوالات پر چوہدری نثار نے پاکستانی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کے غلط استعمال کو روکنے کیلئے فوری کارروائی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق چوہدری نثار نے نادرا ہیڈ کوارٹر میں ایک اجلاس کی صدارت کی، جس میں نادرا کے چیئرمین، ڈی جی پاسپورٹ اور امیگریشن، اور وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے حکام نے شرکت کی۔

وفاقی وزیر نے ہدایات جاری کیں کہ ‘ملک بھر کے قومی شناختی کارڈز کی دوبارہ تصدیق کی منصوبہ بندی کیلئے نادرا 48 گھنٹے میں اپنا لائحہ عمل پیش کرے’۔

وزارت داخلہ کے جاری بیان چوہدری نثار کے حوالے سے بتایا گیا کہ ‘اس اقدام کی مدد سے ہمیں یہ یقین کرنے میں مدد ملے گی کہ مستقبل میں کوئی غیر ملکی پاکستانی قومی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ حاصل نہ کرسکے’۔

وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ اس سارے عمل میں اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ دوبارہ تصدیق کا طریقہ کار آسان ہو اور یہ سارا عمل دوستانہ ماحول میں ہو۔

‘قومی سیکیورٹی ایجنسیز مستقبل میں نادرا کو قومی شناختی کارڈ بلاک کرنے اور تصدیق میں مدد فراہم کریں گی’۔

اس موقع پر وفاقی وزیر نے حکم جاری کیا کہ ‘غیر فعال اور غیر تسلی بخش کارکردگی کے حامل ڈائریکٹرز کو ان کی سروس سے ہٹا دیا جائے’۔

انھوں نے نادرا کے چیئرمین کو ادارے میں موجود کرپٹ عناصر کے خلاف فوری کارروائی کا حکم دیا اور کہا کہ کرپشن کسی بھی سطح پر ہو اسے برداشت نہیں کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں