وہ ملک جس کے سربراہ نے 21 کروڑ روپے خواتین کے انڈرویئر خریدنے پر اُڑادئیے تاکہ….

پیانگ یانگ(ویب ڈیسک) یہ تو سبھی جانتے ہیں کہ شمالی کوریا اپنے میزائلوں اور ایٹمی ہتھیاروں پر بھاری رقوم خرچ کر رہا ہے مگر اب شمالی کورین حکمران کم جونگ ان نے کروڑوں روپے ایک ایسی چیز پر اڑا ڈالے ہیں کہ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے۔ برطانوی اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق کم جونگ ان نے گزشتہ سال اپنے خفیہ حرم(زنان خانے) کی خواتین کے لیے سرکاری عمال کوچین، تھائی لینڈ اور فلپائن سے 15لاکھ پاﺅنڈ(تقریباً21کروڑ 82لاکھ 25ہزار روپے)کے خوبصورت اور دیدہ زیب زیرجامے خریدنے کا حکم دیا تھا جو اب شمالی کوریا پہنچا دیئے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق یہ زیرجامے کم جونگ ان کے حرم کے علاوہ شمالی کوریا کی حکمران اشرافیہ کے بیویوں اور گرل فرینڈز اور منتخب خواتین کے اس گروپ کو فراہم کیے جائیں گے جنہیں ’خوشی دینے والاسکواڈ‘ (Pleasure Squad) کہا جاتا ہے۔
شمالی کوریا کے مفرور فوجیوں کا کہنا ہے کہ ”مسلح فوج سکولوں میں گھس جاتے ہیں اور کلاس رومز سے انتہائی کم طالبات کو اپنے ساتھ لیجا کر زبردستی اس سکواڈ میں بھرتی کرتے ہیں۔ ان میں سے کئی طالبات کی عمر 13سال سے بھی کم ہوتی ہے۔ سکواڈ میں بھرتی کرنے کے بعد انہیں فوجی اشرافیہ کی تفریح طبع کا سامان بننے کی خصوصی تربیت دی جاتی ہے۔ 2011ءمیں کم جونگ ان کے والد کم جونگ ال کی موت کے بعد یہ سکواڈ ختم کر دیا گیا تھا تاہم کم جونگ ان نے بعد ازاں اسے دوبارہ قائم کر دیا۔“ شمالی کوریا کے ایک مفرور فوجی جانگ (Jang) کا کہنا تھا کہ ”سکواڈ کی کچھ لڑکیوں کی ان فوجی اہلکاروں اور سینئر کیڈرز کے ساتھ شادیاں کروا دی جاتی ہیں جو غیرملکی فرائض سرانجام دینے پر مامور ہوتے ہیں۔ باقی لڑکیوں کو دارالحکومت پیانگ یانگ میں فوجی اشرافیہ کی عیاش پرستانہ محفلوں کی زینت بنا دیا جاتا ہے۔“

اپنا تبصرہ بھیجیں