اعوذ             باالله من             الشيطن             الرجيم                بسم الله             الرحمن             الرحيم                الحمد لله              رب             العالمين .             الرحمن             الرحيم . ملك             يوم الدين .             اياك نعبد و             اياك             نستعين .             اهدناالصراط             المستقيم .             صراط الذين             انعمت             عليهم '             غيرالمغضوب             عليهم             ولاالضالين

WWW.URDUPOWER.COM-POWER OF THE TRUTH..E-mail:[email protected]     Tel:1-514-970-3200 / 0333-832-3200       Fax:1-240-736-4309

                    

 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

Telephone:- 0334-5877586

Email:-[email protected]

کالم نگار کے مرکزی صفحہ پر جانے کے لیے کلک کریں

تاریخ اشاعت:۔28-05-2011

کیا ہما را ایٹمی پروگرام محفوظ ہے
کالم۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ محمد وجیہہ السماء
آج ہم 28مئی کو یوم تکبیر کے حوالے سے منا رہے ہیں آ ج سے 13برس قبل میاں نواز شریف سابق وزیر اعظم نے عالمی دباﺅ اور عالمی سطح پر دیئے جانے والے لالچ کو ایک طرف رکھتے ہو ئے عوامی امنگوں کی ترجمانی کر تے ہو ئے ایٹم بم کا کامیاب دھماکہ کر دیا۔ یہ دھماکہ دراصل حقیقت میں انڈیا کی اس جارحیت کا جواب تھا جو وہ وقتاً فوقتاً کر تا رہتا تھا کیو نکہ انڈیا اور اس کے حواریو ں کا خیال تھا کہ پاکستان کبھی بھی اپنے قدموں پر کھڑا اور ایٹم بم نہیں بنا سکتا اور نہ ہی اس کے وسا ئل اس بات کی اجا زت دیتے ہیں ۔ مگر جب ایٹمی دھما کہ ہوا تو پوری دنیا کی آ نکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں اور عالم اسلام کے مسلمانوں خصوصاً پاکستانیوں کو سب سے زیادہ خوشی ہوئی کیو نکہ ان کا خیال تھا کہ ا ب پاکستان ناقابل تسخیر ہوچکا ہے مگر پاکستان کی یہ خوشی اور یہ اقدام مغرب اور شیطانی ذہن کے مالک استعماری ممالک (امریکہ ، اسرائیل، اور انڈیا) کو پسند نہ آ یا اور وہ اسی کوشش میں رہے کہ کسی طرح پاکستان سے اس کا ایٹمی اثاثہ ہتھیالیا جائے اور وہ گزشتہ کئی سالوں سے اپنی اس کوشش کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کی کوشش کرتے رہے اور اُس گزشتہ 28 مئی سے لے کر آ ج تک یہ تینوںممالک پاکستانی ایٹمی ہتھیاروں پر زہر افشا نی کر تے رہتے ہیں ۔ کبھی کو ئی بات کی جا تی ہے تو کبھی کو ئی تما شا کھڑا کر کے پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کر نے کی کوشش کی جا تی ہے مگر تا ریخ گواہ ہے کہ انڈیا کے سا ئنسدان کئی بار ایٹمی مواد دنیا میں سرعام بیچ چکے ہیں مگر امریکہ کو یہ کبھی نظر نہیں آ تا نظر بھی کیسے آئے یہود وہنود بھا ئی بھا ئی جو ٹھہرے۔پاکستان تو ایٹمی طاقت اسی وقت بن گیا تھا جب ہمارے سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو نے یہ کہہ دیا تھا کہ ہم گھا س کھا لیں گے مگر ایٹم بم ضرور بنا ئیں گے یہ بات عوام کے دلوں میں گھر کر گئی تھی اور یہ 1971/72ءکا سال تھا جب ہمارے لیڈر ذوالفقار علی نے ایک میٹنگ میں سا ئنسدانوں سے پوچھا کہ کہ آپ ایٹم بم بنائیں گے یا نہیں سب نے بیک وقت کہا ہم اسے ضرور بنا ئیں گے اور میٹنگ ختم کر دی گئی انھوں نے سائنسدانوں کو یہ کام جلد از جلد مکمل کر نے کو کہا اور اس کے لئے ہر چیز مہیا کی ۔ وقت گزرتا گیا اور پاکستان چند سال بعد ہی سب سے اچھی کو الٹی کی یو رینیم پیدا کر نے لگااور تمام سائنسدانوں کی محنت تھی کہ انڈیا جیسا مکار اور چالاک دشمن جع پاکستان کا تما شہ دیکھنا چا ہتا تھا اور پاکستان کو ٹکڑوں میں تبدیل کر نا چا ہتا تھا مگرہمارے سا ئنسدانوں نے چند سالوں میں ہی اس کا یہ خواب مٹی میں ملا دیا۔
اب ہم نا قا بل تسخیر ہو چکے ہیں مگر ان تینوں سے اپنا ایٹمی پروگرام بچا نا ہمارا فرض ہے کیو نکہ عوامی حلقے ملک میں ہو نے والی دہشت گردی اور بم دھماکوں کو ان تینوں کی ملی بھگت قرار دیتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ کس منظم طریقے سے یہ کارروائیاں ہو رہی ہے اس سے ثا بت ہو تا ہے کہ ان دہشت گردوں کے پیچھے کو ئی بڑ ی طاقت موجود ہے ۔ اور یہ کہ جہاں عام عوام کا جانا منع ہے وہاں دہشت گردی کی کارروائیاں خصوصاً ہماری افواج اور پولیس پر حملے اس بات کی غمازی کر تے ہیں کہ کو ئی ان کے پیچھے ہے جو پاکستان کو ناکام ریاست اور اس کے ایٹمی پروگرام پر قبضہ کر نا چاہتا ہے اور یہ بات بھی حقیقت ہے کہ امریکہ کئی بار یہ بات دہرا چکا ہے کہ پاکستان کے ایٹمی پروگرام کی حفاظت کے لئے امریکہ کو آ نا پڑا تو وہ پاکستان میں آ ئے گا۔ امریکہ جواز تلاش کر رہا ہے کہ پاکستان پر دبا ﺅ بڑھا کر اس سے ہتھیار لے لینا چا ہتا ہے مگر اب ہم سب پر فرض ہے بلکہ ملکی قرض ہے کہ اس کی حفاظت کے لئے سر ڈھڑ کی با زی لگا دیں ویسے بھی عوام کو اپنی فوج ،اپنی حکومت، اور باقی قانون نا فذ کر نے والے ادروں پر فخر ہے کیو نکہ جس ملک کے شیر اپنے ملک کی حرمت کے لئے اپنی جان تک کی پر وا ہ نہ کریں اس ملک کے ایٹمی پروگرام تک کو ئی مائی کا لال نہیں پہنچ سکتا اور اس 28مئی کو مناتے ہو ئے ہمیں یہ ملک سے وعدہ کر نا چا ہیئے کہ پاکستان کی سالمیت، خود مختاری، پر کسی قسم کی آ نچ نہیں آ نے دیں گے اور دشمنوں کی عیا ری کا جواب پتھر سے دیں گے اور اس کے ساتھ ساتھ اپنے ایٹمی پروگرام پر نظر ڈالنے والوں اور انگلی اٹھا نے والوں کو نہیں چھو ڑیں گے ۔چاہے وہ امریکہ ہی کیو ں نا ہو اور امریکہ کو پاکستان کی بجا ئے انڈیا کے سا ئنسدانوں پر دھیان کر نا چا ہیئے جو۔ ۔۔۔۔اللہ پاکستان کو ہمیشہ قائم و دائم رکھیں، آ مین ٭
 
 

Email to:-

 
 
 
 
 
 

Copyright 2009-20010 www.urdupower.com All Rights Reserved

Copyright 2010 urdupower.o.com, All rights reserved