image

رُکن قومی اسمبلی نوابزادہ اقبال مہدی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے

جہلم(اُردو پاورڈاٹ کام)پانچ مرتبہ ممبر قومی اسمبلی ایک دفعہ ممبر صوبائی اسمبلی ،صوبائی وزیر جنگلات و صوبائی مشیر داخلہ اور ممبر قومی اسمبلی نوابزادہ اقبال مہدی جگر کے عارضہ میں ہونے کی وجہ سے انڈیا میں انتقال کر گے مرحوم کی عمر 63سال تھی مرحوم کی نماز جنازہ ان کے آبائی علاقہ داراپور میں ادا کی جائیگی نوابزادہ اقبال مہدی مرحوم نے اپنی سیاست کا آغاز 1983کو ممبر ضلع کونسل کا الیکشن جیت کر کیا مرحوم 1985کے غیر جماعتی الیکشن میں ممبر صوبائی اسمبلی بنے جس میں پہلے انہیں وزیرجنگلات اور بعد میں صوبائی مشیر داخلہ بنایا گیا 1988، 1990،1993،1996 اور 2013میں ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوتے رہے جبکہ مشرف دور میں دو جنرل الیکشن بی اے کی ڈگری نہ ہونے کی وجہ سے الیکشن نہ لڑ سکے اب 2013کے الیکشن میں ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوئے گزشتہ تین چار ماہ سے جگر کے عارضہ میں مبتلا تھے انڈیا علاج کروانے جانے سے قبل وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے ان کی آخری ملاقات ہوئی جہاں انہوں نے سرکاری خرچے پر علاج کروانے کی آفر کی جسے انہوں نے معذرت کے ساتھ کہا کہ میں اپنا علاج اپنے خرچے پر کرواؤں گا مرحوم کے والد راجہ افضال مہدی جنرل ایوب کے دور میں دو دفعہ ممبر قانون ساز اسمبلی بنے اورراجہ افضال مہدی 1967-68میں ڈھاکہ اسمبلی کے سپیکر تھے اور دوران اسمبلی اجلاس چالیس سال کی عمر میں وفات پا گئے ، مرحوم کا بڑا بیٹا نوابزادہ مطلوب مہدی چیئرمین یونین کونسل داراپور ہے اور امیدوار چیئرمین ضلع کونسل جہلم بھی ہے۔ سابق چیئرمین ضلع کونسل جہلم راجہ فیاض آصف مرحوم کے بہنوئی اور سابق وائس چیئرمین بلدیہ راجہ ظفر اقبال کے ماموں زاد تھے مرحوم نوابزادہ اقبال مہدی نے بیوہ ، دو بیٹے اور دو بیٹیاں سوگوار چھوڑے ہیں۔ مرحوم نے تمام الیکشن میں کبھی بھی ہار نہیں دیکھی جس کی بنیادی وجہ ان کا برد بار ہونا ہے ممبر قومی اسمبلی نوابزادہ اقبال مہدی مرحوم کی نماز جنازہ مورخہ 25مئی 2016بروز بدھ بوقت گیارہ بجے دن ان کے آبائی گاؤں داراپور میں ادا کی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں