بولی وڈ میں شاہ رخ کی جگہ نہیں لے سکتا:عدنان صدیقی

معروف پاکستانی اداکار عدنان صدیقی کے ڈراموں ’میرے قاتل میرے دلدار‘، ’کیسی یہ قیامت‘، ’رو برو‘ اور ’رسوائیاں‘ نے ہندوستان میں بھی انہیں مقبولیت تو دلوادی، لیکن کیا عدنان بولی وڈ فلموں میں بھی کامیابی حاصل کرپائیں گے، اس بارے میں انھیں سوچنا پڑے گا۔

واضح رہے کہ عدنان صدیقی بولی وڈ میں اپنی ڈیبیو فلم ’موم‘ کی شوٹنگ میں مصروف ہیں جس میں معروف بولی وڈ اداکارہ سری دیوی مرکزی کردار کرتی نظر آئیں گی۔

ہندوستان ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق 46 سالہ عدنان صدیقی کا کہنا تھا ’میں اب اس عمر میں ہوں جہاں میں بولی وڈ میں شاہ رخ خان، اکشے کمار یا سلمان خان کی جگہ نہیں لے سکتا، وہ بہترین اداکار ہیں اور پاکستان میں بھی کافی مقبول ہیں۔ اگر میں اس دوڑ میں آنا چاہوں تو مجھے اس بری طرح باہر نکال دیا جائے گا کہ میں بھی خود کو نہیں دیکھ پاؤں گا‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’میں ہندوستان میں نوازالدین صدیقی، عرفان خان، کے کے مینن اور منوج باجپائی جیسے اداکاروں کا فارمولا استعمال کرنا چاہتا ہوں، میں ان کی طرح کے کرداروں میں فٹ ہونا چاہتا ہوں اور وہاں اپنا لوہا منوانا چاہتا ہوں‘۔

عدنان نے ہندوستان کی جانب سے ملنے والے پیار پر بھی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’اگر آپ کے کام کو سراہا جائے تو بے حد خوشی ہوتی ہے، ہمیں بھی ہندوستان کے شوز کافی پسند آتے ہیں، مجھے لگتا ہے ہم سب کا مقصد اچھا کام دینا ہی ہے‘۔

عدنان کا تو یہ بھی ماننا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کو مل کر کام کرنا چاہیے۔

ان کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ ’دونوں ممالک کی ثقافت ایک ہی جیسی ہے، مجھے مشکل سے کوئی فرق نظر آتا ہے، دونوں ممالک میں کیا فرق ہے؟ میرے خیال سے صرف نام کا۔ مجھے لگتا ہے کہ جب ہم ایک ہی جیسے ممالک ہوں تو ہمارا کلچر بھی ایک ہی جیسا ہوگا‘۔

فلم ’موم‘ میں عدنان صدیقی کے ہمراہ پاکستانی اداکارہ سجل علی بھی ڈیبیو کرنے جارہی ہیں، اس فلم میں بولی وڈ اداکار نوازالدین صدیقی بھی ایک مختصر کردار کرتے نظر آئیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.